انیس ناگی

 

آج 10  ستمبر پاکستانی شاعر، تنقید نگار اور ناول نگار ڈاکٹر انیس ناگی کا یوم پیدائش ہے۔ ان کا خاندانی نام یعقوب علی ناگی اور قلمی نام انیس ناگی تھا۔  انیس ناگی 10  ستمبر کو شیخوپورہ میں پیدا ہوئے۔ گورنمنٹ کالج لاہور اور گورنمنٹ کالج فیصل آباد میں تدریسی فرائض سرانجام دیئے۔ وہ سابق بیوروکریٹ بھی تھے۔ افغان مہاجرین کے سلسلے میں خاصا کام کیا۔ انیس ناگی نے پچاس سے زیادہ کتب تحریر کیں۔ منیر نیازی سے ان کی خوب دوستی تھی۔ اس کے علاوہ انہوں نے اردو کے معروف افسانہ نگار منٹو پر بے شمار کام کیا۔ ان کے ناولوں میں اہم ترین ناولز ’’زوال‘‘، ’’دیوار کے پیچھے‘‘ اور ’’جنس اور وجود‘‘ ہیں۔ انیس ناگی نے تنقید میں بھی کام کیا اور نظمیں بھی لکھیں۔ ’’ایک ادھوری سرگزشت‘‘ کے عنوان سے اپنی خودنوشت سوانح عمری بھی تحریر کی۔ اس کے علاوہ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور کے میگزین ’’راوی‘‘ کے مدیر بھی رہے۔

انیس ناگی کی بطور شاعر، ناول نگار، افسانہ نویس اور مترجم حیثیتیں اور جہتیں نہایت معتبر ہیں مگر بطور نقاد ان کی تنقید نگاری نہایت منفرد تھی۔

7  اکتوبر 2010 بروز جمعرات وہ پنجاب پبلک لائبریری مطالعے کے لئے گئے جہاں انہیں دل کا دورہ پڑا اور وہ خالق حقیقی سے جاملے۔