سید قاسم محمود

 

آج مورخہ 17 نومبر  پاکستان کے مایہ ناز ادیب، مصنف، مترجم اور ناشر، افسانہ نگار، انسائیکلوپیڈیا پاکستانیکا او اسلامی انسائیکلوپیڈیا کے خالق سید قاسم محمود کا یوم پیدائش ہے۔  وہ بھارتی پنجاب کے ضلع روہتک کے قصبہ کھر کھودہ میں 17 نومبر 1928 کو پیدا ہوئے۔ آپ کے والد کا نام سید ہاشم علی تھا۔

قیام پاکستان کے بعد وہ 1951 میں مجلس زبان دفتری حکومت پنجاب سے بطور مترجم منسلک ہوئے۔ بعد ازاں وہ لیل و نہار، صحیفہ، کتاب، سیارہ ڈائجسٹ، ادب لطیف اور قافلہ کے مدیر رہے۔ 1970 میں انہوں نے لاہور سے انسائیکلوپیڈیا معلومات کا اجرا کیا۔ 1975 میں انہوں نے مکتبہ شاہکار کے زہر اہتمام شاہکار جریدی کتب شائع کرنا شروع کیں۔ 1980 سے 1998 تک وہ کراچی میں مقیم رہے جہاں انہوں نے ماہنامہ افسانہ ڈائجسٹ، طالب علم اور سائنس میگزین کے نام سے مختلف جرائد جاری کئے اور اسلامی انسائیکلوپیڈیا، انسائیکلوپیڈیا فلکیات، انسائیکلوپیڈیا ایجادات اور انسائیکلوپیڈیا پاکستانیکا شائع کئے۔ یوں تو آپ کی علمی و ادبی خدمات کی ایک طویل فہرست ہے۔ وہ انسائیکلوپیڈیا پاکستانیکا اور اسلامی انسائیکلوپیڈیا کی شکل میں اتنا بڑا خزینہ دے گئے ہیں کہ صدیوں تک طالبان علم و ادب اس سے استفادہ کرتے رہیں گے۔وہ مینار پاکستان پر نصب تختیوں کے مدیر تھے اور تمام تختیاں ان کی زیر نگرانی نصب ہوئیں۔ مختصر کہا جائے تو آپ ایک پاکستانی مفکر تھے جنہوں نے چھوٹی کہانیاں، ناول اور دائرۃ المعارف لکھے، اس کے علاوہ آپ ایک بہترین تدوین کار، نثر نگار اور ترجمان بھی تھے۔ آپ نے 15 دائرۃ المعارف (جن میں سے سات مکمل نہیں ہوئی)، ایک لغت، تین جلدوں میں کہانیاں، ریڈیو پاکستان کے لئے پانچ ڈرامے، ایک فلم کی کہانی (باغی سپاہی) اور کئی کتابوں کا ترجمہ کیا، قاسم محمود صوفی منش تھے۔ انسانیت کی خدمت نسل، رنگ، زبان سے مبرا ہوکر انجام دینے پر یقین رکھتے تھے۔ آپ تمام عمر پاکستانی قوم کی علمی و ادبی اصلاح و ترقی کے لئے کوشاں رہے۔ سید قاسم ایک سچے مسلمان، نظریاتی پاکستانی اور خوددار انسان تھے، وہ انعامات کے بجائے خدمت پر یقین رکھتے تھے، حکومت پاکستان نے آپ کی خدمات کے عوض کئی بار آپ کو اعزازات سے نوازنا چاہا مگر آپ نے ہر بار انکار کردیا۔ آپ کی تصانیف میں سے چند ایک درج ذیل ہیں۔

دیوار پتھر کی، قاسم کی مہندی، سید قاسم محمود کے افسانے، چلے دن بہار کے، اردو دائرۃ المعارف، اردو جامع دائرۃ المعارف، دائرۃ المعارف برائے فلکیات، دائرۃ المعارف برائے ایجادات، آسان معیشت، معیشت کے جدید نظریے، اصول سیاست، سائنس کیا ہے؟، قائد اعظم کا پروگرام۔

سید قاسم محمود کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ جو کام بڑے بڑے اداروں کے کرنا کا تھا وہ کام فردِ واحد نے انجام دیا۔

طویل بیماری کے بعد 31 مارچ 2010 کو 82 سال کی عمر میں آپ اپنے خالق حقیقی سے جاملے۔ آپ کو جوہر ٹاؤن قبرستان لاہور میں سپرد خاک کردیا گیا۔